وزیراعظم عمران خان سے آئی ایس آئی کے سربراہ کی ملاقات


اسلام آباد:  وزیراعظم عمران خان سے آئی ایس آئی کے سربراہ لفٹیننٹ جنرل فیض حمید نے جمعہ کے روز وزیراعظم ہاؤس الام آباد میں ملاقات کی۔

وزیراعظم ہاؤس سے جاری بیان کے مطابق دونوں سربراہوں کے درمیان ملاقات میں ملک کی مجموعی سیکیورٹی کی صورت حال  پر تبادلہ خیال کیا گیا ہے۔

ڈائریکٹر جنرل آئی ایس آئی لیفٹیننٹ جنرل فیض حمید کی وزیراعظم عمران خان سے ملاقات ایک ایسے موقع پر ہوئی ہے جب حریف ملک بھارت کی جانب سے پاکستان سے متعلق اشتعال انگیز بیانات سامنے آرہے ہیں۔

خیال رہے کہ 29 جنوری کو بھارت  کے وزیراعظم نریندر مودی نے دعویٰ کیا تھا کہ ان کی فوج سات سے 10 دن میں پاکستانی فوج کو شکست دینے کی صلاحیت رکھتی ہے۔

مزید پڑھیں: کور کمانڈرز کانفرنس، قومی سلامتی کی صورتحال پر غور

بھارتی کیڈٹس کی ریلی سے خطاب کرتے ہوئے مودی نے کہا تھا کہ کہ بھارت نوجوان سوچ کے ساتھ آگے بڑھ رہا ہے اور ہم نے سرجیکل اسٹرائیکس سے دہشتگردوں کو ان کے ٹھکانوں میں نشانہ بنایا۔ ان کا کہنا تھا کہ دو ایئر سٹرائیکس سے نہ صرف جموں و کشمیر بلکہ ملک کے دیگر علاقوں میں بھی امن قائم ہوا۔

انہوں نے الزام لگایا تھا کہ پاکستان نے دہائیوں سے(مقبوضہ) جموں و کشمیر میں بھارت کیخلاف سازشی جنگ چھیڑ رکھی ہے جس سے ہمارے سینکڑوں لوگ اور سیکیورٹی اہلکار ہوئے۔

کوٹلی آزاد کشمیر میں دو دن قبل عوامی جلسے سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان نے کہا تھا کہ پاکستان پر حملہ  مودی کی طرف سے آخری غلطی ہوگی۔

مزید پڑھیں: پورا پاکستان کشمیر کے ساتھ کھڑا ہے، وزیراعظم عمران خان

پاکستان کی عسکری قیادت نے بھارتی وزیراعظم اور آرمی چیف کے بیان کو خطے کے امن کو خطرہ قرار دے دیا تھا۔

14 جنوری کو جی ایچ کیو میں کور کمانڈرز کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہا تھا کہ پاکستانی افواج مادر وطن کا ہر قمیت پر دفاع کرنے کے لیے ہمہ وقت تیار ہیں۔ علاقائی امن کے لیے کوششوں کے ساتھ ساتھ قومی سلامتی و دفاع پر کوئی سمجھوتہ نہیں کیا جائے گا۔


متعلقہ خبریں