زلزلے سے کتنا نقصان ہوا؟

زلزلے سے کتنا نقصان ہوا؟

فوٹو: ہم نیوز


اسلام آباد: آزاد کشمیر اور پنجاب کے اکثر علاقوں میں منگل کی دوپہر آنے والے زلزلے سے جانی اور مالی نقصان اطلاعات وصول ہوئی ہیں۔

ہم نیوز کو مختلف سرکاری اداروں اور آزاد ذرائع سے موصول ہونے والی اطلاعات کے مطابق زیادہ نقصان آزادکشمیر میں ہوا جہاں امدادی کارروائیاں جاری ہیں۔

آرمی چیف جنرل قمرجاوید باجوہ نے فوج کو امدادی کارروائیوں میں حصہ لینے کا حکم دیا اور متاثرہ علاقوں میں طبی امداد بھی روانہ کر دی گئی ہے۔

آزاد کشمیر کا علاقہ میرپور سب سے زیادہ متاثر ہوا ہے جہاں متعدد عمارتیں گرنے کی بھی اطلاعات ہیں۔

زلزلے سے کہاں کہاں نقصان ہوا

وزیر اطلاعات آزاد کشمیرمشتاق منہاس کے مطابق بالائی جہلم نہر میں شگاف سے متعدد علاقوں کے ڈوبنے کا خدشہ ہے اور قریبی علاقوں سے شہریوں کو محفوظ مقامات پر منتقل کیا جارہا ہے۔

ڈسٹرکٹ انفارمیشن آفیسر راولپنڈی ڈاکٹر عبدالرحمان کے مطابق میرپور میں پلازہ گرنے سے50 افراد ملبے تلے دب گئے ہیں۔ بھمبرکے درمیان پل منڈا کو بھی نقصان پہنچا ہے۔

مزید پڑھیں: زلزلے سے کتنا جانی نقصان ہوا؟

ترجمان واپڈا کے مطابق زلزلے کی وجہ سے منگلا جھیل کا پانی گدلا ہو گیا ہے اور حفاظتی طور پر پاور ہاؤس کی ٹربائنیں بند کی گئی ہیں۔

میرپور کے علاقے جاتلاں سے ملحقہ گاؤں چک نگاہ میں نہر کا پانی داخل ہو گیا اور لوگ محصور ہو کر رہ گئے ہیں۔

جہلم کے قریب شاہراہ پر گہری دراڑیں پڑ چکی ہیں جس سے ٹریفک کی روانی متاثر ہوئی ہے۔

ہم نیوز کو ملنی والی تصاویر کے مطابق کچھ گاڑیاں بھی سڑک میں دھنس چکی ہیں جن کو نکالنے کے لیے امدادی کارروائیاں جاری ہیں۔

سینٹرل جیل میر پور کی عمارت بھی زلزلے سے متاثر ہوئی ہے جس کی دیواریں گر چکی ہیں تاہم کوئی جانی نقصان نہیں ہوا۔

میر پورجاتلاں، میر پور روڈ جہلم اور منگلا ڈیم کے قریب نہر کنارے سڑک میں گہری دراڑیں پڑنے سے ٹریفک کی روانی متاثر ہوگئی ہے۔

آزاد کشمیر میں سڑک پر گہرے شگاف سے مسافر بس الٹ گئی۔ زلزلے سے میرپور میں بجلی اور مواصلات کا نظام متاثر ہوا ہے۔

اسپتالوں کی صورتحال

متاثرہ علاقوں میں تمام سرکاری اور نجی اسپتالوں میں ایمرجنسی نافذ کر دی گئی ہے۔ چھٹیوں پر گئے عملے کو واپس بلا لیا گیا ہے اور زخمیوں کو ہنگامی بنیادوں پر طبی امداد دی جارہی ہے۔

اسلام آباد میں زلزلے سے متاثرہ افراد کے لیے اسپتالوں میں اضافی بیڈز اور خون کا انتظام کر دیا گیا ہے۔ وزارت صحت کا کہنا ہے کہ ضرورت پڑنے پر ازاد کشمیر سے بھی مریض اسلام آباد لائے جائیں گے۔

میرپور جو سب سے زیادہ متاثر ہوا وہاں کی ضلعی انتظامیہ نے اسپتالوں میں ایمرجنسی نافذ کردی ہے۔


متعلقہ خبریں