سعودی وزیر خارجہ کی وزیراعظم، آرمی چیف سے ملاقات

سعودی وزیر خارجہ کا وزیراعظم کو سعودی ولی عہد کا خصوصی پیغام

اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان سے سعودی وزیر خارجہ نے ملاقات کی ہے۔ وزیراعظم نے وزیراعظم ہاؤس پہنچنے پر خود ان کا استقبال کیا۔

اس موقع پر سعودی وزیر خارجہ نے وزیراعظم کو سعودی ولی عہد شہزاد محمد بن سلمان کا پیغام پہنچایا۔ وزیراعظم نے سعودی وزیرخارجہ کو امن سے سے متعلق آگاہ کیا۔

وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ پاکستان خطے میں امن چاہتا ہے کیونکہ خطے میں کشیدگی کسی کے مفاد میں نہیں۔ ملاقات میں بھارتی اشتعال انگیزی کے بعد پیدا ہوانے والی صورتحال پر تبادلہ خیال بھی کیا گیا۔

سعودی وزیر خارجہ عادل الجبیر کی آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سے ملاقات

سعودی وزیر خارجہ عادل الجبیر نے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سے ملاقات کی۔

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے مطابق ملاقات میں پاک بھارت کشیدگی سے پیدا ہونے والی صورت حال پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

اس موقع پرعادل الجبیر نے کہا کہ علاقائی امن کے لیے پاکستان کی کوششوں کی حمایت جاری رکھیں گے۔

آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہا کہ مشکل حالات میں امن کے لیے کام کرنے پر سعودی وزیر خارجہ کے شکرگزار ہیں، سعودی عرب نے ہمیشہ پاکستان کا سچا دوست ہونے کا ثبوت دیا ہے۔

ہم نیوز کے مطابق سعودی وزیر خارجہ عادل الجبیرخصوصی طیارے کے ذریعے آج ہی پاکستان پہنچے۔

سعودی ولی عہد کی طرف سے مصالحت کی پیشکش کا خیرمقدم کرتے ہیں، شاہ محمود

سعودی عرب کے وزیر مملکت برائے خارجہ امور عادل الجبیر کی وزارتِ خارجہ آمد  پر وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی نے سعودی ہم منصب کا خیر مقدم کیا۔ دوران ملاقات پاک بھارت کشیدگی اور خطے میں امن و امان کی صورتحال سمیت دو طرفہ باہمی دلچسپی کے امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

اس موقع پر مخدوم شاہ محمود قریشی نے کہا کہ پاکستان اور بھارت کے مابین کشیدگی کے خاتمے کے لیے سعودی ولی عہد کی طرف سے مصالحت کی پیشکش کا خیرمقدم کرتے ہیں۔

سعودی وزیر مملکت برائے خارجہ امور سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلطان کی ہدایت پر پاکستان تشریف لائے ہیں۔ سعودی وزیر خارجہ کے اس ایک روزہ دورے کا مقصد پاکستان اور بھارت کے درمیان تناؤ کی فضا کو معمول پر لانا ہے۔

دونوں وزرائے خارجہ نے پاک سعودی سپریم رابطہ کونسل کے تحت دو طرفہ اقتصادی، سیاسی اور سیکورٹی سے متعلقہ تعاون کو فروغ دینے سے متعلق طے کردہ امور کو معینہ مدت کے اندر پائے تکمیل تک پہنچانے پر اتفاق کیا۔

سعودی وزیر مملکت برائے خارجہ امور عادل الجبیر نے وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی کو دونوں ممالک کے درمیان تصفیہ طلب امور کو پر امن طریقے سے حل کروانے کے سلسلے میں سعودی حکومت کی طرف سے مکمل اور بھرپور تعاون کا یقین دلایا۔

سعودی وزیر خارجہ نے گزشتہ ہفتے پاکستان کا دورہ کرنا تھا جو بھارت کی طرف سے امن کوششوں کا مثبت جواب نہ ملنے پر ملتوی ہو گیا تھا۔

خیال رہے کہ سعودی وزیر خارجہ دورہ پاکستان پر ایک ایسے موقع پر آئے ہیں جبکہ پلوامے حملے کے بعد سے پاکستان اور بھارت کے تعلقات کشیدہ ہیں۔

بھارتی طیاروں نے پاکستانی فضائی حدود کی خلاف ورزی کرتے ہوئے پاک سرزمین پر چار بم گرائے تاہم ان سے کوئی جانی نقصان نہیں ہوا۔

دو روز بعد پاک فضائیہ نے اپنی فضائی حدود میں دو بھارتی طیارے مار گرائے جن میں سے ایک آزاد جبکہ دوسرا مقبوضہ کشمیر میں گرا۔ جائے وقوعہ سے بھارتی پائلٹ ابھی نندن کو بھی حراست میں لیا گیا۔

گرفتاری کے اگلے ہی روز وزیراعظم عمران خان نے جذبہ خیرسگالی کے تحت بھارتی پائلٹ کو رہا کرنے کا اعلان کردیا جسے پاکستان اور بھارت سمیت دنیا بھر میں بے انتہا سراہا گیا۔ یہاں تک کے ٹوئٹر پر عمران خان کو نوبیل انعام دینے تک کا ٹرینڈ چل پڑا۔

ابھی نندن کو جمعے کے روز براستہ واہگہ بارڈر بھارتی حکام کے حوالے کیا گیا۔ پاکستان کے اس خیرسگالی کے جذبے کے باوجود بھارتی قیادت کی جانب سے مسلسل جنگی جنون پر مبنی بیانات سامنے آرہے ہیں۔


متعلقہ خبریں