این آر او ملکی مفاد میں تھا، مشرف کا سپریم کورٹ کو جواب


اسلام آباد: جنرل (ر) پرویز مشرف نے قومی مفاہمتی فرمان (این آراو) کیس میں اپنا جواب سپریم کورٹ میں جمع کرا دیا ہے جس میں انہوں نے دعویٰ کیا ہے کہ این آر او ملکی مفاد کے تحت تھا۔

اپنے جواب میں انہوں نے کہا کہ این  آر او کے لیے وزیراعظم نے ایڈوائس بھیجی تھی، اس کا مقصد قومی مفاہمت کا  فروغ ، باہمی اعتماد میں اضافہ، سیاسی انتقام  کا خاتمہ اور انتخابی عملی کو شفاف بنانا تھا۔

جنرل (ر) پرویز مشرف نے سپریم کورٹ میں جمع کرائے گئے جواب میں کہا کہ این آراو کسی بدنیتی سے جاری نہیں کیا گیا بلکہ اس وقت کے سیاسی حالات کو مدنظر رکھتے ہوئے یہ  قانون بنایا گیا، انہوں نے یہ دعویٰ بھی  کیا کہ این آراو کا اجرا کرکے کوئی غیرقانونی کام نہیں کیا گیا۔

انہوں نے اپنے جواب میں یہ بھی کہا کہ اس وقت کی سپریم کورٹ نے این آراو کو کالعدم قرار دے دیا تھا۔


متعلقہ خبریں