جے یو آئی کا پی ٹی آئی سے مذاکرات نہ کرنے کا فیصلہ

مولانا فضل الرحمان

اسلام آباد: جمعیت العلمائے اسلام (ف) نے فیصلہ کیا ہے کہ پاکستان تحریک انصاف کے ساتھ کسی بھی فورم پر مذاکرات نہیں کیے جائیں گے۔

وزیراعظم شہباز شریف نے قومی اسمبلی سے اعتماد کا ووٹ لے لیا

جے یو آئی (ف) نے منعقدہ اجلاس میں کیے جانے والے فیصلے کے تحت پی ٹی آئی کے ساتھ مذاکرت کرنے والی کسی بھی مذاکراتی ٹیم کا حصہ نہ بننے کا فیصلہ کیا ہے۔

اس حوالے سے ذرائع نے بتایا ہے کہ جے یو آئی (ف) نے منعقدہ اجلاس میں مؤقف اختیار کیا ہے کہ پی ٹی آئی کو تسلیم نہیں کرتے ہیں نہ باہر اور نہ پارلیمان کے اندر، اس لیے پی ٹی آئی سے کہیں پر بھی مذاکرات نہیں ہوں گے۔

گھر بھجوانا چاہتے ہیں تو تیار ہیں، ایوان کا مان نہیں توڑوں گا، ساتھ کھڑا رہوں گا، وزیر اعظم

ہم نیوز نے ذرائع سے بتایا ہے کہ جے یو آئی (ف) نے فیصلہ کیا ہے کہ پارلیمنٹ اور آئین پاکستان کے دفاع میں جلسے منعقد کیے جائیں گے۔

واضح رہے کہ گزشتہ دنوں بھی امیر جے یو آئی (ف) اور حکومتی اتحاد پی ڈی ایم کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے پی ٹی آئی کے حوالے سے سخت مؤقف اپنایا تھا اور پریس کانفرنس بھی کی تھی۔

جس شخص کو اب تک نااہل ہو جانا چاہئے تھا عدالت اسے سیاست کا محور بنا رہی، مولانا فضل الرحمان

میڈیا رپورٹس کے مطابق چیئرمین پی پی اور وزیر خارجہ بلاول بھٹو زرداری اس کے بعد مولانا فضل الرحمان کو اسی حوالے سے منانے کے لیے ان کے گھر بھی گئے تھے۔


متعلقہ خبریں