کوئٹہ سمیت دیگر اضلاع کو ایک ہفتے بعد گیس کی فراہمی  بحال


کراچی: بلوچستان کے علاقے بولان میں بارشوں میں تباہ ہونے والی گیس پائپ لائن کا مرمتی کام مکمل  کرلیا گیا اور کوئٹہ سمیت صوبے کے دیگر اضلاع کو گیس کی فراہمی  بحال کردی گئی ہے۔

ترجمان سوئی سدرن  گیس کمپنی لمیٹد کے مطابق بارشوں میں تباہ ہونے والی گیس پاٸپ لاٸن کا مرمتی کام مکمل کردیا گیا ہے اور کوٸٹہ کو گیس بحال کردی گٸی ہے۔ کوئٹہ سمیت دیگر علاقوں کو ایک ہفتے بعد گیس کی فراہمی بحال کردی گئی

ترجمان سوٸی سدرن کے مطابق ایس ایس جی سی کی تباہ ہونے والی دو میں سے ایک 12 انچ قطر کی مین پاٸپ لاٸین کا مرمتی کام مکمل ہوگیا ہے۔ کوٸٹہ کو 20 ایم ایم سی ایف ڈی گیس کی ترسیل بحال کردی۔

ترجمان سوٸی سدرن کے مطابق کوٸٹہ کی گیس بحال کرنے کے بعد 24 انچ کی مین لاٸن کا مرمتی کام شروع کردیا گیا ہے۔

ترجمان کا کہنا ہے کہ پائپ لائن کی مرمت میں مدد فراہم کرنے پر ایف سی کے جوانوں اور سول انتظامیہ کو خراج تحسین پیش کرتے ہیں۔ ایف سی کے جوانوں کی بدولت ہماری ٹیکنکل ٹیم نے مرمتی کام مکمل کیا۔۔

واضح رہے کہ مون سون کی حالیہ بارشوں کے سبب پاکستان کے دو صوبوں سندھ اور بلوچستان میں سیلابی صورتحال پیدا ہوگئی تھی اور لوگوں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑا تھا۔

مزید پڑھیں: بلوچستان: احساس کیش پروگرام، وزیراعظم ریلیف فنڈ سیلز ٹیکس سے مستثنیٰ قرار

بلوچستان میں طوفانی بارشوں سے ندی نالوں میں طغیانی طغیانی آگئی تھی جب کہ ڈیرہ بگٹی اور ہرنائی میں حفاظتی بند بھی ٹوٹ گئے تھے۔

سیلابی ریلے رہائشی علاقوں میں داخل ہوگئے ہیں جس کے باعث خضدار، کوہلو، بولان میں بھی سیلابی صورتحال ہے۔

مچھ کے قریب  ایک  ہی خاندان کے چھے افراد  سیلابی ریلے  میں بہہ گئے جب کہ پانی میں ڈوبنے اور چھتیں گرنے سے دو افراد جاں بحق اور چھ سے زائد زخمی ہوگئے ہیں۔

کوئٹہ سے اندرون سندھ اور پنجاب جانے والی قومی شاہراہ دو مختلف مقامات سے ٹوٹ گئی ہے جس سے دونوں اطراف سینکڑوں گاڑیاں پھنسی ہوئی ہیں۔ مسافروں میں بڑی تعداد میں خواتین اور چھوٹے بچے بھی شامل ہیں۔

بولان کے پہاڑی علاقوں میں شدید بارش کے باعث گوکرد کے مقام پر پل گرگیا ہے۔ پنجرہ پل کے قریب سیلابی پانی سے  سڑک بہہ گئی ہے۔ فورٹ منرو میں بھی بارش کے بعد ندی نالوں میں طغیانی  کے بعد سڑک بلاک ہو گئی ہے۔


متعلقہ خبریں