بھارت ایک قدم اٹھائے ہم دو اٹھائیں گے، شاہ محمود

پلوامہ حملہ: ’پاکستان ٹھوس شواہد پر تعاون کرنے کے لیے تیار‘ | ہم نیوز

اسلام آباد: وزارت خارجہ کی جانب سے قومی اسمبلی کو بتایا گیا ہے کہ پاکستان بھارت سمیت ہمسایہ ممالک سے اچھے تعلقات کا خواہاں ہے اور وزیراعظم برملا اظہار کر چکے ہیں کہ بھارت ایک قدم اٹھائے گا تو ہم دو اٹھائیں گے۔

وزیرخارجہ نے پاک بھارت تعلقات اور کلبھوشن یادیو کے معاملے پر قومی اسمبلی کو بتایا کہ بھارتی وزیر اعظم کے خط کے جواب میں مثبت پیش رفت پر زور دیا گیا ہے۔

شاہ محمود قریشی نے تحریری طور پر قومی اسمبلی کو آگاہ  کیا کہ اقوام متحدہ کے جنرل اسمبلی اجلاس کے دوران نیویارک میں دونوں وزرائے خارجہ کی ملاقات منسوخ ہوئی۔

وزیرخارجہ نے ایوان کو بتایا کہ بے بنیاد وجوہات پر ملاقات کی بھارتی منسوخی نے خطے میں امن و ترقی کا ایک اور موقع ضائع کیا ہے۔

قومی اسمبلی کو بتایا گیا کہ بھارتی کمانڈر کلبھوشن یادیو کا کیس آئی سی جے میں زیر سماعت ہے اور اس معاملے پراٹارنی جنرل نے قانونی حکمت عملی مرتب کی ہے

وزارت خارجہ نے بتایا کہ کلبھوشن یادیو عرف حسین مبارک پٹیل بھارتی نیوی کا حاضر سروس افسر ہے اور بھارتی انٹیلیجنس ایجنسی راء کے لیے کام کرتا ہے۔

قومی اسمبلی کو بتایا گیا کہ کلبھوشن کو 3 مارچ 2016 کو کو بلوچستان سے گرفتار کیا گیا اور جاسوسی کے الزام  فیلڈ جنرل کورٹ مارشل کی جانب سے سزائے موت دی گئی ہے۔


متعلقہ خبریں