غزہ پر بمباری سے مزید درجنوں فلسطینی شہید ، اسرائیل کی جنگی کابینہ تحلیل

نصیرات بمباری

اسرائیلی فوج نے عید الاضحیٰ پر بھی جارحیت جاری رکھتے ہوئے نصیرات میں پناہ گزین کیمپ پر بمباری کرکے مزید 17 فلسطینیوں کو شہید کر دیا۔

مقامی میڈیا کے مطابق جنوبی غزہ میں ٹینکوں کے ذریعے حملے جاری ہیں، 24 گھنٹوں کے دوران حملوں کے نتیجے میں بچوں سمیت مزید درجنوں فلسطینی شہید ہو گئے ہیں۔

غزہ ، اسرائیلی طیاروں کی اسکول میں پناہ لینے والوں پر بمباری ، 32 فلسطینی شہید

دوسری جانب رفح میں القسام بریگیڈ کے جوابی حملے کے دوران دو روز میں 11 اسرائیلی فوجی ہلاک ہو گئے ہیں ، لبنان سے حزب اللہ اور اسرائیلی فوج کی جھڑپوں میں بھی اضافہ ہو گیا، اسرائیلی فوج نے حزب اللہ سے تنازع وسیع ہونے کا اشارہ دے دیا۔

فلسطینی وزارت صحت کے مطابق 7 اکتوبر 2023ء سے شروع ہونے والے اسرائیلی حملوں میں شہید فلسطینیوں کی مجموعی تعداد 37 ہزار 347 ہو گئی ہے۔

اسرائیلی بمباری سے مزید 30 فلسطینی شہید ، غزہ کا آخری فعال اسپتال بھی بند

ادھرغزہ میں جنگ جاری رکھنے پر اسرائیل کی جنگی کابینہ میں اختلافات پیدا ہو گئے جس کے بعد 2 وزراء نے استعفیٰ دے دیا، مستعفی ہونے والے بینی گینٹز نے الزام لگاتے ہوئے کہا کہ وزیر اعظم نیتن یاہو ہمیں حقیقی کامیابی کی جانب بڑھنے سے روک رہے ہیں۔

اختلافات سامنے آنے کے بعد وزیر اعظم نیتن یاہو نے جنگی کابینہ کو تحلیل کرتے ہوئے کہا کہ بینی گینٹز کے مستعفی ہونے کے بعد جنگی کابینہ کی ضرورت نہیں رہی۔

واضح رہے اسرائیلی وزیر اعظم پر انتہاء پسند جماعتوں کی جانب سے جنگی کابینہ میں نئے ارکان کو شامل کرنے کا دباؤ تھا۔


متعلقہ خبریں