پاکستان جرمنی کے ساتھ اپنے دیرینہ تعلقات کو قدر کی نگاہ سے دیکھتا ہے، شہبازشریف

کابینہ توسیع

وزیراعظم شہباز شریف نے کہا ہے کہ پاکستان جرمنی کے ساتھ اپنے دیرینہ تعلقات کو قدر کی نگاہ سے دیکھتا ہے اور جرمنی کو یورپ میں اپنا ایک اہم شراکت دار تصور کرتا ہے، دونوں ملکوں کے درمیان صنعت،متبادل توانائی، معدنیات اور دیگر شعبوں میں تعاون بڑھانے کے لئے پر عزم ہیں۔

وزیراعظم شہباز شریف سے جرمنی کی این جی او گلوبل بریجز، برلن کے وفد نے منگل کے روز یہاں ملاقات کی، وفد میں گلوبل بریجز کے چئیرمین، ہینس ایلبرٹ، چیف ایگزیکٹو آفیسر اور جرمنی کاروباری افراد اور سرمایہ کار شامل تھے۔

حکومت، اپوزیشن میں عدم اتفاق، شیخ وقاص اکرم کو متوقع طور پر ملنے والی پوزیشن خطرے میں پڑ گئی

ملاقات میں پاکستان میں تعینات جرمنی کے سفیر الفریڈ گرینیس بھی موجود تھے۔اس موقع پر وزیراعظم نے وفد سے جرمن زبان میں اظہار خیال کیا تو شرکا حیران رہ گئے اور وفد کے شرکا شہباز شریف کی جرمن زبان میں بات چیت سے محظوظ ہوئے اور داد دیے بغیر نہ رہ سکے۔ جرمن وفد کے سربراہ نے وزیراعظم شہباز شریف کی جرمن زبان میں گفتگو پر ان کا شکریہ ادا کیا۔

شہباز شریف کا کہنا تھا کہ آپ کو خوش آمدید کہہ کر خوشی ہورہی ہے، جرمنی اور پاکستان کا مختلف شعبوں میں تعاون ہے۔

وزیراعظم نے کہا کہ پاکستان جرمنی کے ساتھ اپنے دیرینہ تعلقات کو قدر کی نگاہ سے دیکھتا ہے، پاکستان جرمنی کو یورپ میں اپنا ایک اہم شراکت دار تصور کرتا ہے، پاکستان جرمنی کے ساتھ مختلف شعبوں میں تعاون بڑھانے کے لیے پرعزم ہے۔

وزیراعظم شہباز شریف نے دوطرفہ تجارت کی موجودہ سطح کو مزید وسعت دینے کی خواہش کا اظہار بھی کیا۔ شہباز شریف نے کہا کہ پاکستان میں جرمن سرمایہ کاری میں اضافے کے وسیع امکانات موجود ہیں، دونوں ملکوں کے درمیان صنعت،متبادل توانائی، معدنیات اور دیگر شعبوں میں تعاون بڑھانے کے لئے پر عزم ہیں، متبادل توانائی، موسمیاتی تبدیلی، زراعت اور غذائی تحفظ بارے جرمنی کے تجربے سے فائدہ اٹھانا چاہتے ہیں۔

پنجاب حکومت نے پاکستان کی پہلی ای کیٹل مارکیٹ قائم کردی

جرمن وفد نے پاکستان کی کاربن کریڈٹ مارکیٹ میں سرمایہ کاری اور پاکستان میں موسمیاتی تبدیلی اور زراعت کے شعبوں میں سرمایہ کاری کے بارے میں بھی دلچسپی کا اظہار کیا۔ملاقات میں وفاقی وزرا جام کمال خان، رانا تنویر حسین، عطا اللہ تارڑ اور دیگر نے شرکت کی۔


متعلقہ خبریں