جے یو آئی امیدوار عبدالحفیظ لونی کو الیکشن لڑنے سے روک دیا گیا

سپریم کورٹ

سپریم کورٹ نے جمعیت علمائے اسلام (جے یو آئی)کے امیدوار عبدالحفیظ لونی کو الیکشن لڑنے سے روک دیا۔

چیف جسٹس پاکستان کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے این اے 252سے انتخابات میں حصہ لینے سے متعلق عبدالحفیظ لونی کی درخواست پر سماعت کی جس دوران درخواست گزار کے وکیل نے کہا کہ عبدالحفیظ لونی کی نیب کیس میں سزا پوری ہوچکی انہیں الیکشن لڑنے کی اجازت دی جائے۔

ابرار الحق کا الیکشن سے دستبردار ہونے کا اعلان

اس پر چیف جسٹس قاضی فائزعیسی نے مکالمہ کرتے کہا کہ آپ کا موکل صرف 2سال اور 2ماہ جیل میں رہا، نیب کورٹ نے 10سال کی سزا اور 5کروڑ روپے جرمانہ کیا، 8سال تک آپ کا موکل پے رول پرجیل سے باہر رہا۔

آپ کے موکل نے 5کروڑکا جرمانہ ادا نہیں کیا، ایسے لوگ بلوچستان کے عوام کی نمائندگی نہ کریں۔

الیکشن 2024: 34فیصد امیدواران 1990کے عام انتخابات بھی لڑ چکے

چیف جسٹس نے مزید کہا کہ الیکشن نہ لڑیں گھربیٹھیں،الیکشن میں آپ کا خرچہ ہوگا جب کہ جسٹس محمد علی مظہر نے کہا کہ 5کروڑکا جرمانہ ادا نہ کرنے پراس کی جائیداد ضبط ہونی چاہیے۔

بعد ازاں عدالت نے الیکشن ٹربیونل اوربلوچستان ہائیکورٹ کا کاغذات مسترد کرنے کا فیصلہ برقرار رکھا اور عبدالحفیظ کی اپیل مسترد کرتے ہوئے انہیں الیکشن لڑنے سے روک دیا۔


متعلقہ خبریں