’وزیراعظم سیلیکٹ‘ کو مبارکباد پیش کرتا ہوں ، بلاول


اسلام آباد: چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ وہ ’وزیراعظم سیلیکٹ‘ کو مبارکباد دیتے ہیں، عمران خان اب ہر پاکستانی کے وزیراعظم ہیں، ان کے بھی جنہیں وہ زندہ لاشیں، گدھے اور بھیڑ بکریاں کہتے تھے۔

قومی اسمبلی میں اپنی پہلی تقریر کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اب عمران خان کا امتحان شروع ہو چکا ہے، انہوں نے اپنے وعدے کے مطابق ایک کروڑ نوکریاں دینی ہیں، 50 لاکھ گھر تعمیر کرنے ہیں اور جنوبی پنجاب کو صوبے کا درجہ دینا ہے جبکہ انتہائی خراب ملکی معیشت کو بھی درست کرنا ہے۔

چیئرمین پیپلزپارٹی کا کہنا تھا کہ پیپلزپارٹی نے انتخابی عمل پر اپنے تمام تر تحفظات کے باوجود جمہوریت کے لیے ایوان میں بیٹھنے کا فیصلہ کیا اور اُن جماعتوں کو بھی قائل کیا جو ایوان میں بیٹھنے کے لیے تیار نہیں تھے۔

انہوں نے کہا کہ وزیراعظم کو اپوزیشن جماعتوں کا بھی شکریہ ادا کرنا چاہے کیونکہ وہ اگر ایوان میں نہ آتیں تو آئینی بحران جنم لیتا، دھاندلی کی تحقیقات کے لیے پیپلزپارٹی دیگر اپوزیشن جماعتوں کے ساتھ مل کر پارلیمانی کمیشن کے قیام کا مطالبہ کرتی ہے۔

بلاول بھٹو نے امید ظاہر کی کہ عمران خان ماضی کی نفرت انگیز سیاست سے گریز کریں گے اور تمام جماعتوں کو ساتھ لے کر چلیں گے۔

انہوں نے کہا کہ اگر نومنتخب وزیراعظم عمران خان نے آئینی راستے سے ہٹنے کی کوشش کی تو وہ اُن کے راستے کی رکاوٹ بنیں گے، پاکستان پیپلزپارٹی عوامی مسائل اور جمہوریت پر کوئی سمجھوتا نہیں کرے گی۔

چیئرمین پیپلزپارٹی نے کہا کہ پاکستان میں شفاف انتخابات کرانا انتہائی مشکل کام ہے۔ عام انتخابات سے پہلے اور بعد میں دھاندلی ہوئی، کچھ جماعتوں کا میڈیا پر بلیک آؤٹ کیا گیا، اظہار رائے پر پابندی لگائی گئی۔


متعلقہ خبریں