نکاسی آب میں مشکلات کا سب سے بڑا سبب بجلی کی بندش ہے، سعید غنی

سندھ میں 22 اپریل سے عملی طور پر تعلیمی عمل بحال ہو گا، سعید غنی

فوٹو: فائل


کراچی وزیر بلدیات سندھ سعید غنی نے وزیر اعظم عمران خان کی معاون خصوصی برائے اطلاعات ڈاکٹر  فردوس عاشق اعوان کی پریس کانفرنس پر ردعمل میں کہاہے کہ کراچی اور حیدرآباد میں بارشوں کے بعد نکاسی آب میں مشکلات کا سب سے بڑا سبب بجلی کی بندش ہے۔  

وزیر بلدیات سندھ کی طرف سے جاری بیان میں کہا گیاکہ اس وقت بھی حیدرآباد میں حیسکو کی جانب سے بجلی کی بحالی کو ممکن نہیں بنایا جاسکا۔ کراچی کی سینکڑوں فیڈرز جبکہ حیدرآباد کے کم و بیش تمام فیڈرز بند ہوگئے تھے۔

سعید غنی نے کہا کہ اس وقت بھی کراچی اور حیدرآباد میں 36 گھنٹے گزر جانے کے باوجود مکمل طور پر بجلی بحال نہیں ہوسکی ہے۔ اسلام آباد میں بیٹھ کر کراچی اور حیدرآباد کے لئے بیان دینے سے قبل فردوس عاشق اعوان صاحبہ کو حقائق جاننا چاہیے تھے۔

انہوں نے کہا کہ واپڈا کی نااہلی کی سزا اس وقت بھی حیدرآباد کے عوام بھگت رہے ہیں،اس وقت بھی کراچی کی تمام اہم شاہراہوں پر ٹریفک روانی سے جاری ہے جبکہ لاہور میں جب بارش ہوئی اس وقت کیا صورتحال تھی اس کو بھی محترمہ کو دیکھنا چاہیے۔

وزیر بلدیات سندھ نے کہا کہ ایسا لگتا ہے کہ فردوس عاشق اعوان نے لاہور کی فوٹیج میڈیا پر دیکھ کر اسے کراچی سمجھ لیا ہے۔ سندھ حکومت اور تمام بلدیاتی ادارےمکمل طور سے دونوں شہروں میں بارش کی صورتحال کو کنٹرول کئے ہوئے ہیں اور تمام عملہ دن رات کام میں مصروف ہے۔

انہوں نے کہا کہ فردوس عاشق اعوان صاحبہ بجلی کے بحران کے خاتمے کے لئے اقدامات کریں ناکہ صوبائی حکومت کو تنقید کا نشانہ بنائیں۔

واضح رہے کہ وزیر اعظم کی معاون خصوصی برائے اطلاعات ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے آج وفاقی کابینہ کے اجلاس کے بعد پریس بریفنگ میں سندھ حکومت کو کڑی تنقید کا نشانہ بنایا ۔

ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ کابینہ نے کراچی میں حالیہ بارشوں سے ہونیوالی تباہی پر تشویش کا اظہار کیا ہے۔ کراچی اور حیدرآباد میں حالیہ بارشوں سے گڈ گورننس کا راگ الاپنے والے بے نقاب ہوئے۔

یہ بھی پڑھیے: شہر میں بارش: مئیر کراچی نے وفاقی وزیر برائے بحری امور سے مدد طلب کر لی


متعلقہ خبریں