فراڈ سے کیسے بچیں؟ اسٹیٹ بینک کا پبلک سروس میسج

State Bank

پاکستان میں بینکنگ کے حوالے سے دھوکہ دہی کی خبریں عام ہوتی جارہی ہیں، دھوکہ باز افراد خود کو بینک کا نمائندہ ظاہر کرکے صارف سے اس کے اکاؤنٹ سے متعلق معلومات حاصل کرلیتے ہیں جو صارف کے نقصان کا باعث بنتی ہیں۔

اس دھوکہ بازی سے بچنے کے لیے اسٹیٹ بینک آف پاکستان کی جانب سے صارفین کی آگاہی کے لیے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر ایک ویڈیو شیئر کی گئی ہے جس میں عوام الناس کو خبردارکرتے ہوئے بتایا گیا ہے کہ وہ اس قسم کی فون کالز سے کیسے بچ سکتے ہیں۔

اسٹیٹ بینک کے پبلک سروس میسج کی ویڈیو میں ایک خاتون اپنے شوہر کو بتاتی ہے کہ آپ کے آنے سے پہلے اسٹیٹ بینک سے فون آیا تھا کہ سسٹم اپ گریڈ کیا جارہا ہے اپنا شناختی کارڈ نمبر اور اکاؤنٹ نمبر بتادیں تاکہ آپ کا نمبر بلاک ہونے سے بچ سکے۔

اسٹیٹ بینک کا پہلی مرتبہ ڈیجیٹل کرنسی لانچ کرنے کا پلان

جس پر خاتون کا شوہر اسے سمجھاتا ہے کہ اس طرح فون کرنے والے لوگ دھوکا باز ہوتے ہیں، کبھی کسی کو اپنا شناختی کارڈ نمبر اور اکاؤنٹ نمبر نہیں بتانا چاہئے۔

اس کے علاوہ فراڈ کے سدباب کے لیے اسٹیٹ بینک کی جانب سے بینکوں کو ہدایات بھی جاری کی جاتی ہیں کہ وہ اپنے آگاہی کے پیغامات اور ایس ایم ایس کے ذریعے صارفین کو آگاہ کرتے رہیں کہ کوئی بھی آپ سے آپ کے اکاؤنٹ کے بارے میں معلومات حاصل کرنا چاہے تو اسے معلومات نہ دی جائیں۔

اسی طرح بینک کا کوئی بھی نمائندہ فون پر بھی کسی بھی صارف سے بینک اکاؤنٹ کے حوالے سے معلومات حاصل نہیں کرسکتا ہے۔


متعلقہ خبریں