روایتی حریفوں کا تگڑا مقابلہ، بھارت نے پاکستان کو 4 وکٹوں سے ہرا دیا

ٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ کے بڑے ٹاکرے میں  بھارت نے دلچسپ مقابلے کے بعد پاکستان کو 4 وکٹوں سے شکست دے دی۔

میلبرن کے میدان میں کھیلے گئے میچ میں بھارت کی ٹیم نے پاکستان کی جانب سے دیا گیا 160 رنز کا ہدف اننگز کے آخری اوور کی آخری گیند پر حاصل کر لیا۔

بھارت کی جانب سے ہدف کے تعاقب کا آغاز اچھا ثابت نہ ہو سکا، محض 30 اسکور پر بھارت کی چار وکٹیں گر گئیں۔

جس کے بعد ویرات کوہلی اور ہاردیک پانڈیا کی جوڑی 114 رنز کی شراکت داری قائم کر کے ٹیم کو دوبارہ میچ میں واپس لے آئی۔

سابق بھارتی کپتان نے 53 گیندوں پر 82 رنز بنائے جب کہ پانڈیا 40 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے۔بھارتی ٹیم کو آخری اوور میں جیت کے لیے 16 رنز درکار تھے۔

بہترین بیٹنگ کا مظاہرہ کرنے پر ویرات کوہلی کو مین آف دی میچ کا ایوارڈ دیا گیا۔

پاکستان کی اننگز

قومی ٹیم کے کپتان بابراعظم بھارت کے خلاف بغیر کوئی رنز بنائے پہلی گیند پر پویلین لوٹ گئے۔ارشدیب سنگھ کی پہلی گیند پر بابر اعظم کو امپائر نے ایل بی ڈبلیو دیا تاہم انہوں نے فورا رویو لیا۔ تھرڈ امپائر کے چیک کرنے پر معلوم ہوا کہ وہ صاف آؤٹ تھے۔

بعد ازاں بھارتی پیسرز ارشدیب اور بھونیشور کمار نے  سیم اور سوئنگ بولنگ سے قومی بیٹرز کو دباو میں باندھے رکھا کہ اس دوران رضوان ارشدیب کی گیند پر تھرڈ مین میں کیچ دے بیٹھے۔

سلامی بیٹرز کے جلد آؤٹ ہونے کے بعد شان مسعود اور افتخار احمد نے محتاط بیٹنگ کرتے ہوئے ٹیم کا اسکور 60 رنز تک پہنچا دیا

گیاروہویں اوور کے لیے بھارت کی جانب سے اسپنر ایشون بولنگ کے لیے آئے جنہیں افتخار احمد نے میچ کا پہلا چھکا جڑ دیا۔

بھارت کی جانب سے بارہویں اوور کے لیے اکثر پٹیل کو لایا گیا۔ افتخار احمد نے انہیں ایک اوور میں تین چھکے لگا کر اپنی ففٹی مکمل کی۔ انہیں اگلے اوور میں محمد شامی نے آؤٹ کیا۔

افتخار کے آؤٹ ہونے کے بعد شاداب اور حیدر بھی جلد پویلین لوٹ گئے۔ اس موقع پر نواز نے آ کر دو چوکے لگائے تاہم ان کا سفر بھی جلد ہاردیک پانڈیا نے 9 اسکور پر ختم کر دیا۔

شان مسعود ایک طرف سے وکٹ سنبھال کر بیٹنگ کرتے رہے ان کا ساتھ دینے کے لیے آصف علی آئے اور وہ بھی محض تین گیندوں کے مہمان ثابت ہوئے۔

انجری سے واپس آنے والے شاہین شاہ آفریدی نے بھونیشور کمار کو چھکا اور چوکا جڑ کے دباو واپس بھارت کی جانب منتقل کر دیا۔ اس دوران شان مسعود نے اپنی نصف سنچری بھی مکمل کر لی۔

اختتامی اوور میں شاہین کے آوٹ ہونے کے بعد حارث روف نے چھکا لگا کر ٹیم کا ٹوٹل 159 رنز تک پہنچا دیا۔

ٹاس

اس سے پہلے بھارت نے ٹاس جیت کر پاکستان کو پہلے بیٹنگ کی دعوت دے دی۔

کپتان بابر اعظم نے کہا کہ بہتر اسکور کرنے کی کوشش کریں گے، نیوزی لینڈ سے سیریز کھیل کر آئے ہیں جو بہت زیادہ مددگار ثابت ہوگی، آج کے میچ میں قومی ٹیم 3فاسٹ باولرز اور2اسپینرز کے ساتھ گراونڈ میں اتریں گے، انہوں نے کہا کہ وکٹ اچھی ہے، ہم تیار ہیں کھیل دلچسپ ہوگا۔

بھارت کے خلاف قومی اسکواڈ میں کپتان بابر اعظم کے ساتھ  محمد رضوان ،شان مسود ، افتخار احمد، آصف علی ، حیدر علی شاداب خان، محمد نواز،  شاہین شاہ افریدی، نسیم شاہ اور حارث روف میدان میں اتریں گے۔

بھارتی ٹیم میں روہت شرما، کے ایل راہول، ویرات کوہلی اور سوریا کمار یادیو، ہاردک پانڈیا، دنیش کارتک، اکشر پٹیل اور روی چندرن آشوین شامل ہیں، جبکہ محمد شامی، بھونیشور کمار اور ارشدیپ سنگھ بھی بھارتی پلیئنگ الیون کا حصہ ہیں۔

پاکستان اور بھارت رواں سال دو بار مدمقابل آچکے ہیں، ایشیا کپ کے پہلے میچ میں بھارتی ٹیم کامیاب رہی لیکن دوسرے میچ میں پاکستانی ٹیم نے بدلہ چکا دیا۔

یہ بھی پڑھیں: ٹی ٹوئنٹی ورلڈکپ : پاک بھارت میچ بارش سے متاثر ہونےکا امکان

پاکستان اور بھارت ٹی ٹوئنٹی میں گیارہ بار آمنے سامنے آچکے ہیں، پاکستان نے تین، بھارت نے سات میچز میں کامیابی سمیٹی جبکہ دونوں ٹیموں میں ایک میچ ٹائی ہوا۔

پاکستان کپتان بابر اعظم نے کہا کہ بارش اور موسم ہمارے ہاتھ میں نہیں ہیں، جتنا بھی میچ ہوگا اس کیلئے مکمل تیار ہیں، وکٹ دیکھ کر فیصلہ کریں گے کہ کس کو کھلانا ہے اور کس کو نہیں، انہوں نے کہا کہ ٹی ٹوئنٹی میں کسی بھی دن کچھ بھی ہو سکتا ہے، کسی کھلاڑی کا پتہ نہیں ہوتا کہ کون سا کھلاڑی چل جائے۔

جبکہ بھارتی کپتان روہت شرما نے پاکستانی بالرز کو بڑا چیلنج قرار دیتے ہوئے کہا کہ پاکستان ٹیم اچھی کرکٹ کھیل رہی ہے، ایشیا کپ میں کمزوریوں اور صلاحیتوں کا پتہ چلا تھا پاکستان کی بالنگ کے ساتھ ان کے بلے بازوں کو آؤٹ کرنا ہے۔

متعلقہ خبریں