باہر کے ملکوں میں استقبال کرنیوالوں کے چہرے کہہ رہے ہوتے ہیں ،آ گئے پیسے مانگنے ،شہباز شریف


 وزیراعظم شہباز شریف نے کہا ہے کہ ہم نے آئی ایم ایف پروگرام خوشی سے نہیں مجبوری میں قبول کیا ، قرضوں سے جان چھڑانے کیلئے ملکر کام کرنا ہو گا۔

پشاور میں فاٹا یونیورسٹی میں لیپ ٹاپ تقسیم کرنے کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم شہباز شریف نے کہا کہ میں یا ہمارے دوسرے رہنما جب باہر کسی ملک میں جاتے ہیں تو وہاں ہمارا استقبال کرنیوالے لوگوں کے چہرے کہہ رہے ہوتے ہیں کہ یہ آ گئے ہم سے پیسہ مانگنے۔

انہوں نے کہا کہ مشکل معاشی صورتحال کے باعث آئی ایم ایف کے پاس گئے۔ قرضوں سے جان چھڑانا اور بھکاری پن کا خاتمہ کرنا ہے تو مل کر کام کرکے اپنے پیروں پر کھڑا ہونا ہوگا۔

خطے میں تنائو نہیں ،امن اور خوشحالی چاہتے ہیں،شہباز شریف

شہباز شریف کا کہنا تھا کہ سعودی عرب نے 2 ارب ڈالر اسٹیٹ بینک میں جمع کرا دئیے ہیں۔ مشکل وقت میں ساتھ دینے پر سعودی عرب کا شکریہ ادا کرتا ہوں۔ وزیرخزانہ اسحاق ڈار اور آرمی چیف جنرل عاصم منیر کا بھی شکریہ ادا کرنا چاہتا ہوں۔ انہوں نے اس سلسلے میں بڑی محنت کی۔

انہوں نے کہا کہ مہنگائی میں بتدریج کمی لائیں گے۔ معاشی صورتحال میں بہتری آ رہی ہے، چند سالوں میں پاکستان خطے کا خوشحال ملک ہوگا۔


متعلقہ خبریں