آٹا تقسیم کی مد میں 20 ارب روپے سے زائد کی چوری ہوئی ، شاہد خاقان عباسی کا انکشاف

پاکستان میں جو ہورہا ہے اس کی ذمہ دار پارلیمنٹ اور انتظامیہ ہے، شاہد خاقان

سابق وزیر اعظم اور ن لیگ کے سینئر رہنما شاہد خاقان عباسی نے کہا ہے کہ ہرروز مشکلات میں اضافہ ہور ہا ہے۔

ہم نیوز کے مطابق لاہور میں کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہالوگ یہ سوال کرتے ہیں کہ ملکی مسائل کا حل کیا ہے،سیاسی نظام آج کیا ڈلیور کر رہا ہے۔

سیاسی دشمنی نفرت میں بدل گئی ہے،بدقسمتی سے سب تماشائی بنے بیٹھے ہیں، تسلیم کرنا ہوگا کہ ملکی معاملات مشکل میں ہیں۔

نیب اس ملک کا کرپٹ ترین ادارہ ہے ،شاہد خاقان عباسی

ملک کے ادارے ایک دوسرے کے سامنے ہیں،یہ ملک کے نظام کی بڑی ناکامی ہے، تمام سیاسی پارٹیوں کو ملا کر بھی10 رکنی کابینہ نہیں بنا سکتے۔

تمام سیاسی جماعتیں حکومت میں رہ چکی ہیں ، کیا کوئی ڈلیور کر سکا، ملکی مسائل کی وجہ سیاسی قیادت کی مشترکہ ناکامی ہے۔

معاملات کے حل کیلئے سب کو اکٹھا ہونا ہوگا، ہم نے ہزاروں بیوروکریٹس اور ججز دیکھے ہیں ، سب چلے جاتے ہیں ۔

عمران خان نے کوئی کام پاکستان کیلئے نہیں کیا، شاہد خاقان عباسی

آرٹیفیشل لیڈرشپ ملک کیلئے نقصان دہ ہے،حقیقی لیڈرشپ نہیں ہوگی تو ملک آگے نہیں بڑھے گا، پارلیمان میں جانے کی خواہش ہر کسی کی ہوتی ہے ،پارلیمان میں جانے کیلئے تعلیم ، کاروباری اور سیاسی تجربہ ہونا ضروری ہے۔

نظام کی درستگی صرف سیاست ٹھیک نہیں کر سکتی ،ملک میں جب تک حقیقی لیڈر شپ نہیں ہو گی مسائل حل نہیں ہو سکتے ۔

ہم بیورکریسی میں قابل ترین لوگ لیتے اور لو لیول بنا کر چھوڑتے ہیں ،سیکریٹری وزیراعظم کو کہہ رہا ہوتا ہے مجھے نیب پکڑ کر لے جائے گی ۔

ملک کے دیوالیہ ہونے کا کوئی خطر ہ نہیں ، شاہد خاقان عباسی

صوبوں کی حکومت کو ضلعی اور ڈویژن کے سطح پر لے کر جائیں نظام چل جائے گا،یہ نظام کچھ نہیں کر سکتا، یہ بات ذہن میں ڈال لیں۔

ہمارے پاس شخصی حل ہے کہ فلاں کو وہاں بھیج دو ،سیاستدانوں میں اہلیت ہوگی تو مسائل حل ہوں گے ،انہوں نے انکشاف کیا کہ مفت آٹے کی تقسیم میں 20ارب سے زیادہ کی چوری ہوئی ہے۔


متعلقہ خبریں