پولیس میں روبوٹک کتے بھرتی


نیویارک: امریکہ کے شہر نیویارک میں محکمہ پولیس نے روبوٹک کتے بھرتی کر لیے جو کچھ مقامات پر پولیس کی مدد کریں گے۔

غیر ملکی خبر رساں ایجنسی کے مطابق نیویارک کے میئر ایرک ایڈمس نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ ڈجی ڈاگ جسے “اسپاٹ” کا نام دیا گیا ہے وہ بعض مقامات پر پولیس کی مدد کریں گے۔

انہوں نے کہا کہ روبوٹک کتے زیرتعمیر بڑے منصوبوں اور کچھ دیگر مقامات کی نگرانی کریں گے جہاں پولیس کو کسی طرح سے خطرہ رہتا ہے۔

کچھ عرصہ قبل بھی اس مشہور روبوٹک کتے کو متعارف کرایا گیا تھا۔ اس روبوٹک کتے کو بوسٹن ڈائنامسک نے بنایا ہے جسے 2020 میں بھی کچھ ذمہ داریاں سونپی گئی تھیں تاہم اعتراض کیا گیا تھا کہ یہ روبوٹک کتا لوگوں کے لیے نقصان کا باعث بن سکتا ہے۔

اب دوبارہ اس روبوٹک کتے کو پولیس میں کچھ مقامات پر نگرانی کے لیے بھرتی کیا گیا ہے۔ اس وقت پہلے مرحلے میں صرف 2 کتے اپنی خدمات سرانجام دیں گے جنہیں دہشتگردی یا بم دھماکوں میں استعمال کیا جائے گا۔

واضح رہے کہ اس وقت ایک روبوٹ کتے کی قیمت 7 لاکھ 50 ہزار ڈالر ہے۔


متعلقہ خبریں