معدوم ہاتھی کو دوبارہ زندہ کرنے کا منصوبہ


معدوم دیوقامت ہاتھی ‘میمتھکو دوبارہ زندہ کرنے کا منصوبہ تیار کر لیا گیا ہے۔

امریکی ماہرین نے میمتھ کے ڈی این اے کی عام ہاتھیوں سے کلوننگ کے لیے ڈٰیڑھ کروڑ ڈالر کا سرمایہ جمع کرلیا ہے۔

منجمد میمتھ کے ڈی این اے کا موازنہ ایشیائی ہاتھی سے کیا جائے گا۔ جس کےبعد ایشیائی ہاتھی کے خلیات لے کر اس میں میمتھ کے جین شامل کئے جائیں گے۔

میمتھ کی کئی لاشیں بہترین حالت میں روسی برفیلے خطوں بالخصوص سائبیریا سے ملی ہیں جن کی ہڈیوں میں گودا اور گوشت کے ٹکڑے بھی سلامت ہیں جس کے بعد ماہرین نے ان کو دوبارہ دنیا میں لانے کا فیصلہ کیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں:80 سال بعد کسی ہاتھی کے جڑواں بچوں کی پیدائش

ماہرین نے امید ظایر کی ہے کہ اگلے چھ برس میں پہلا میمتھ نما ہاتھی اس دنیا میں آنکھ کھولے گا۔

رپورٹ کے مطابق دس ہزار سال قبل میمتھ صفحہ ہستی سے مٹ گئے تھے۔ اگرچہ ان کی کلوننگ پر دس برس سے غور جاری ہے لیکن اب ’کلوسل‘ نامی بایوٹیکنالوجی کمپنی نے منصوبے کے لیے رقم جمع کی ہے۔

یہ بھی پڑھیں:دبئی: کلوننگ اونٹوں کی مانگ میں اضافہ

ہاتھی کو دوبارہ وجود میں لانے کے لیے چار مراحل میں یہ کام کیا جائے گا۔ پہلے مرحلے میں جو جانور تخلیق کیا جائے گا وہ نصف ہاتھی اور نصف میمتھ ہوگا، دوسرے مرحلے میں ایشیائی ہاتھی کی جلد کے خلیات لے کر اسے جینیاتی انجینئرنگ سے بدل کر میمتھ کے جین شامل کئے جائیں گے۔
تیسرے مرحلے میں اسٹیم سیل کی مدد سے ایک بیضہ تیار کیا جائے گا، جبکہ آخری میں  میں انڈے کی افزائش شروع کرکے اسے ایشیائی مادہ میں داخل کرکے اسے حاملہ کیا جائے گا۔


متعلقہ خبریں