کورونا ویکسین کیلئے پاک فضائیہ کا طیارہ چین روانہ


کورونا ویکسین پاکستان لانے کیلئے پاک فضائیہ کا طیارہ چین روانہ ہوگیا ہے۔ ویکسین یکم فروری کو پاکستان پہنچنے کا امکان ہے۔ 

حکومت نے ویکسین کی اسلام آباد میں اسٹوریج سے متعلق انتظامات مکمل کرلیے ہیں اور ویکسین سنٹرز بھی قائم کردیئے گئے ہیں۔

نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر کے اجلاس میں بتایا گیا کہ اسلام آباد سے کورونا ویکسین صوبوں تک پہنچائی جائے گی۔

ذرائع کے مطابق پہلی کھیپ میں چین سے کورونا ویکسین کی 5 لاکھ خوراکیں آئیں گی۔ پی آئی اے کی جگہ پاک فضائیہ کا خصوصی طیارہ چین جائے گا۔ خصوصی طیارہ بیجنگ سے کورونا ویکسین اسلام آباد لائے گا۔

پاکستان نے ابتدائی طور پر چینی کمپنی سائنوفارم سے ویکسین کی 12لاکھ ڈوزیز خریدنے کا فیصلہ کیا ہے جو79 فیصد مؤثر ہے۔

این سی او سی نے ویکسین اسٹریٹجی پلان کو تمام صوبوں اور اسٹیک ہولڈرز کے ساتھ مشاورت کے بعد مرتب کیا ہے۔

ویکسین پلان بہترین مروجہ عالمی اصولوں اور ہیلتھ گائیڈ لائنز کو مد نظر رکھتے ہوئے مرتب کیا گیا ہے۔ ویکسین اسٹریٹجی کا مقصد صحت مند ماحول اور حفظان صحت کے اُصولوں کے مطابق ایک مربوط نظام کے تحت لوگوں کو ویکسین لگانا ہے۔

این آئی ایم ایس کو قومی سطح پر قومی ویکسین ایڈمنسٹریشن اینڈ کوآرڈی نشن سیل کے ذریعے چلایا جائے گا۔ قومی ویکسین ایڈمنسٹریشن اینڈ کوآرڈینشن سیل کےعلاوہ ملک بھر میں اے وی سی سینٹرزقائم کئے گئے ہیں۔ این سی او سی کا نظام ڈیجیٹل ہے اور اس کو شفاف رکھنے کے لیے انسانی عمل دخل بہت محدود ہے۔


متعلقہ خبریں