راؤ انوار کیس 18 مارچ کو سپریم کورٹ میں سماعت کے لیے مقرر


اسلام آباد: سپریم کورٹ میں سابق ایس ایس پی راو انوار کے خلاف ماورائے عدالت قتل سے متعلق کیس سماعت کیلئے مقرر کر دیا گیا ہے۔

جسٹس مشیر عالم کی سربراہی میں تین رکنی بنچ 18 مارچ کو سماعت کرے گا، عدالت نے فریقین کو نوٹسز جاری کر دیے۔

یاد رہے کہ رؤانوار کا معاملہ اس وقت منظرعام پر آیا تھا جب  27 سالہ نسیم اللہ عرف نقیب اللہ محسود کو 13 جنوری 2018 کو ملیر کے علاقے شاہ لطیف ٹاؤن میں مبینہ پولیس مقابلے کے دوران جاں بحق کر دیا گیا تھا جب کہ اس کی لاش کی شناخت 17 جنوری کو ہوئی تھی۔

نقیب اللہ کے قتل کے بعد اُن کی تصاویر اور جعلی پولیس مقابلے میں ہلاکت کی خبر سوشل میڈیا پر وائرل ہوئی اور لوگوں نے پولیس کو کڑی تنقید کرتے ہوئے چیف جسٹس پاکستان سے نوٹس لینے کا مطالبہ کیا جبکہ سول سوسائٹی نے واقعہ کے خلاف آواز اٹھاتے ہوئے پولیس کے اقدام کو ماورائے عدالت قتل قرار دیا۔

یہ بھی پڑھیں : امریکہ نے سابق ایس ایس پی ملیر راؤ انوار کو بلیک لسٹ کر دیا

نقیب اللہ کے قتل کی خبر نے پوری قوم کو جنجھوڑ کر رکھ دیا اور ہر جانب سے پولیس کے اقدام کے خلاف آواز اٹھنے لگی جبکہ کراچی، اسلام آباد سمیت مختلف شہروں میں احتجاجی مظاہرے اور دھرنے بھی دیے گئے۔

یاد رہے کہ پاکستان انٹرنیشنل ایئرلائنز کمپنی لمٹیڈ (پی آئی اے سی) نے منگل کے روز اسلم خان کو پی آئی اے کا نیا چیئرمین مقرر کر دیا تھا۔

سپریم کورٹ میں سابقہ چیئرمین ارشد ملک کا کیس چل رہا ہے۔

سپریم کورٹ میں سی ای او پی آئی اے ارشد محمود ملک کی تعیناتی سے متعلق کیس بھی سماعت کیلئے مقرر کر دیا گیا ہے۔

چیف جسٹس گلزار احمد کی سربراہی میں تین رکنی بنچ 18 مارچ کو سماعت کرے گا۔

اٹارنی جنرل سمیت دیگر فریقین کو نوٹسز جاری کر دیے گئے۔

مزید پڑھیں : پی آئی اے: غیر قانونی بھرتیوں کی تحقیقات شروع


متعلقہ خبریں