اسلام آباد اور پنجاب میں ڈینگی بے قابو ہوگیا، حکومتی اقدمات ناکافی


لاہور: مچھر سے پھیلنے والا جان لیوا مرض ڈینگی بے قابو ہوتا دکھائی دے رہا  ہے۔ افوسناک امر ہے کہ ملک کی سب سے بڑی صوبائی حکومت سمیت شہری انتظامیہ کی جانب سے تاحال ہنگامی بنیادوں پر وہ اقدامات اٹھتے دکھائی نہیں دے رہے ہیں جس کے حالات متقاضی ہیں۔ ناکافی اقدامات کے باعث ہر گزرتا دن مریضو کی تعداد میں اضافے کا سبب بن رہا ہے۔

گزشتہ 24گھنٹوں میں ڈینگی وائرس سے متاثرہ کتنے مریض سامنے آئے؟

ہم نیوز کے مطابق گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران صرف اسلام آباد اور پنجاب میں ڈینگی سے متاثرہ مزید 348 مریضوں کو اسپتالوں میں لایا گیا ہے جہاں انہیں طبی امداد دی جارہی ہے۔

ڈینگی کنٹرول پروگرام کا اس ضمن میں کہنا ہے کہ ان کے پاس موجود اعداد و شما رکے تحت اس وقت پورے ملک میں ڈینگی سے متاثرہ مریضوں کی تعداد تین ہزار 674 ہے۔ دستیاب اعداد و شمار کے مطابق متاثرہ مریضوں میں سے دو ہزار 158 پنجاب سے تعلق رکھتے ہیں۔

ڈاکٹر یاسمین راشد نے ڈینگی کے خاتمے کیلئے سابق ن لیگی وزیر سے مدد مانگ لی

ہم نیوز کے مطابق وفاقی دارالحکومت اسلام آباد کے مختلف علاقوں سے 198 مریضوں کو اسپتالوں میں لایا گیا ہے۔ اعداد و شما رکے مطابق پنجاب میں ڈینگی کے جو نئے متاثرہ مریض صوبے کے مختلف اسپتالوں میں علاج کے لیے لائے گئے ہیں ان میں سے راولپنڈی کے 127 مریض شامل ہیں جب کہ لاہور سمیت دیگر چار شہروں سے تعلق رکھنے والے مریضو ں کی تعداد 19 بتائی جارہی ہے۔

ہم نیوز کے مطابق ذمہ دار ذرائع کا دعویٰ ہے کہ آئندہ ایک دو دن میں مزید ہنگامی بنیادوں پر اٹھائے جانے والے اقدامات دکھائی دیں گے۔ وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار عمرے کی ادائیگی کے لیے سعودی عرب میں موجود تھے۔


متعلقہ خبریں