سندھ: ٹڈی دل  نے خیر پور کے بعد اب دیگر اضلاع کا رخ کرلیا

لیہ: ٹڈی دل کے حملے میں فصلوں کو نقصان

پاکستان کے جنوبی صوبہ سندھ میں خیرپور کے بعد ٹڈی دل  نےاب دیگر اضلاع کا رخ کرلیا ہے۔ خطرناک ٹڈیاں خیرپور، نوابشاہ، سانگھڑ، جامشورو اور مٹیاری میں پہنچ گئیں اورکھیتوں اور بیابانوں میں بسیرا کرلیاہے۔

بڑی بڑی ٹڈیوں نے ن اضلاع میں کاشت کی گئی مختلف  فصلوں پر حملہ کرکے تباہی مچادی  ہے۔ مختلف اضلاع میں آم اور کیلے کے باغات پر ٹڈیوں کے حملے سے کاشتکار پریشان شدید پریشان ہیں۔

کاشتکاروں کا کہنا ہے کہ ٹڈی دل  نے حملہ کرکے کپاس اور گنے کی فصلوں کو اجاڑنا شروع کردیا ہے۔ مختلف شہروں میں سبزیوں کے کھیت بھی ٹڈیوں کی زد میں آگئے ہیں ۔

مختلف اظلاع میں کاشتکاروں نے ہم نیوز سے گفتگو میں انکشاف کیا ہے کہ سندھ حکومت ٹڈی دل  کے حملے سے تاحال لاتعلق دکھائی دے رہی ہے۔ محکمہ زراعت سندھ نے صرف خیرپور میں ٹڈیوں کی آمد کے متعلق وفاق سے رابطہ کیا تھا۔

محکمہ زراعت سندھ نے ٹڈی دل کے حملے کے تدارک کے لیے از خود کوئی پیش رفت نہیں کی۔

تاہم ذرائع نے ہم نیوز کو بتایاہے  کہ  جامشورو ضلعی انتظامیہ نے مانجھند اور تھانہ بولا خان میں سروے کا اعلان کردیا ہے۔

ان اضلاع میں زمیندار، آبادگار اور کاشتکار ٹڈیوں کے آگے بے بس دکھائی دیتے ہیں اور وہ  روایتی طریقوں سے ٹڈیوں کو بھگانے میں مصروف عمل ہیں۔

سندھ آبادگار بورڈ نے ٹڈیوں کے حملے پر تشویش ظاہر کردی ہے۔ نائب صدر آباد گار بوعرڈ محمود نوا زشاہ نے ہم  نیوز سے گفتگو میں کہا ہے کہ ٹڈیوں نے تباہی  بپا کردی ہے مگر محکمہ زراعت ابھی تک نیند میں ہے۔

یہ بھی پڑھیے:’سندھ میں تباہی کی ذمہ دار پیپلز پارٹی ہے‘

سندھ آباد گار بورڈ نے بھی دیگر اضلاع کے کسانوں کی طرح وفاقی اور صوبائی حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ ٹڈی دل کے اس خطرناک حملے کے تدارک کے لیے کردار ادا کریں ۔

انہوں نے کہا ہے کہ ٹڈی دل کا وقت پر تدارک نہ کیا گیا تو کیلے ،کپاس اور سبزیوں کی فصلوں کا اربوں روپے کا نقصان ہوگا اور صوبے کی معیشت تباہ ہوجائیگی۔


متعلقہ خبریں